وزیراعظم عمران خان نے ایک بار پھر مسلم لیگ نون اور پاکستان پیپلز پارٹی کی قیادت پر الزامات کی بوچھاڑ کر دی ہے

69

یونیورسٹی آف مالاکنڈ کے نئے بلاک کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا 30 سال میں ملک کا پیسا چوری کیا گیا، ان کو خود نہیں پتا ان کے پاس کتنا پیسا ہے۔
وزیراعظم عمران خان نے ایک بار پھر مسلم لیگ نون اور پاکستان پیپلز پارٹی کی قیادت پر الزامات کی بوچھاڑ کر دی ہے وزیراعظم عمران خان نے یونیورسٹی آف مالاکنڈ کے نئے بلا کے افتتاح سے خطاب کرتے ہوئے سیاسی جماعتوں کے قائدین کو اچھا خاصا رگڑا لگا دیا

ان کا مزید کہنا تھا یہ ان کے پیسے کی لعنت ہی ہے جس کی وجہ سے ان کے بچے جھوٹ بول رہے ہیں، لعنت ہے ایسے پیسے پر، کبھی اسپتال جاتے ہیں اور کبھی جیل جاتے ہیں۔

کیا عزیر اعظم عمران خان کے پاس صرف پاکستان کی سیاسی قائدین کو ذلیل کرنا اور ان کو خلاف الزامات لگانے کے علاوہ اور کوئی کام نہیں رہ گیا پاکستان میں کتنی مہنگائی ہو رہی ہے اس کا کبھی عمران خان صاحب نے نوٹس نہیں لیا
وزیراعظم عمران خان سے ازبکستان کے وزیرخارجہ کی ملاقات
عمران خان کا کہنا تھا ن لیگ نے ڈھائی سال میں 20 ہزار ارب روپے قرض بمعہ سود روپے ادا کیے جب کہ ہم نے ڈھائی سال میں قرضہ بمعہ سود 35 ہزار ارب روپے ادا کیے، دوستوں نے ہماری مدد کی اور ہم نے ملک کو ڈیفالٹ ہونے سے بچایا۔

انہوں نے کہا کہ جب اتنے زیادہ قرضے واپس ہوں تو تعلیم، اسپتال اور سڑکوں کے لیے پیسے نہیں بچتے، ہمارے لیے یہ سب عبرت ناک چیزیں ہیں۔

عمران خان صاحب نے مزید اپوزیشن پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ ملک اس لیے نہیں بنا جیسے بھارت پر ٹاٹا برلا کی حکومت ہے اسی طرح پاکستان میں نواز شریف اور آصف زرداری صاحب دن بدن امیر ترین انسان ہوتے جا رہے ہیں اور پاکستان غریب ترین ہوتا جا رہا ہے پاکستان کے پاس اتنا پیسہ یا اتنا نہیں ہے کہ وہ اپنی عوام کی صحت اور ملک کو خوش حال بنانے کے لیے صرف کر سکیں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.